کالم

صفائی سے ’’ہاتھ کی صفائی‘‘ تک۔۔۔حسن نثار

المناک بھی ہے، طربناک بھی، مضحکہ خیز بھی، دلچسپ اور دردناک بھی کہ اک دنیا پاکستانیوں کو صاف ستھرا رہنے، صفائی اختیار کرنے کی تلقین کر رہی ہے اور اس میں بہت سے غیرملکی خواتین و حضرات بھی شامل ہیں۔ان

مینڈک جیسی زندگی۔۔۔جاوید چوہدری

آپ نے ابن بطوطہ اور مارکو پولو کا نام سنا ہو گا‘ یہ کون تھے؟ یہ عام سے بھی کم تر لوگ تھے‘ ابن بطوطہ طنجہ کا منحنی سیاہ فام شخص تھا‘ ایک کمرے کے مکان میں رہتا تھا‘ تعلیم

چمچہ ازم ۔۔۔تحریر: مراد علی شاہد

اپنے باس کے دفتر میں ایک میٹنگ میں تھا کہ میری ایک تجویز کے جواب میں وہ اچانک گویا ہوئے کہ مسٹر مرادI Love Spoonism ذرا حیرت ہوئی کہ سوشلزم،کمیونزم،فاشزم،بدھ ازم اور نیپوٹزم تو سن اور پڑھ رکھا تھا یہ

دلی پھر برباد ہو گئی!۔۔۔روٗف کلاسرا

ہو سکتا ہے آپ کو عجیب سا لگے کہ مجھے دلی میں موجودہ قتل و غارت اور بربادی پر حیرانی نہیں ہوئی لیکن انسان ہونے کے ناتے بہت افسوس اور دکھ ہے ۔ یہ دکھ پہلی دفعہ نہیں ہو رہا

سوری رانگ نمبر۔۔۔ تحریر: جاوید چوہدری

سکھ نے دوسرے شہر سے اپنے گھر فون کیا‘ نوکر نے فون اٹھایا‘ سکھ کو ملازم کی آواز اجنبی سی محسوس ہوئی‘ اس نے پوچھا تم کون ہو؟ نوکر نے اپنا نام بتا دیا‘ سکھ نے کہا ’’میں نے تو

عمران خان اب تک ناکام کیوں ہے۔۔۔ تحریر: ہارون الرشید

ساری خرابی تجزیے کی ہوتی ہے ۔ تجزیہ ناقص ہوتو عمل بے ثمر ۔ اپنی ذات سے اوپر اٹھنا ہوتا ہے ۔ وہ نہیں اٹھ سکتا ۔ اب تک نہیں اٹھ سکا ۔ اللہ اس کا حامی و ناصر ہو

معمولی اہلکار۔۔۔ تحریر: مظہر برلاس

جی تو چاہتا ہے کہ اپنے دوست کالم نگار کا لکھا ہوا کالم دہرا دوں مگر واقعات اس برق رفتاری سے جاری ہیں کہ حالات تیزی سے بدل رہے ہیں۔ہمسائے کی گواہی سب سے معتبر سمجھی جاتی ہے لہٰذا میرے

لاڑکانے چلو‘ ورنہ تھانے چلو۔۔۔ تحریر: روف کلاسرہ

منگل کے روز وفاقی کابینہ کے اجلاس میں وزرا میڈیا پر پھٹ پڑے تو پھر فیصلہ ہوا کہ فوری طور پر میڈیا کو لگام ڈالی جائے۔ سب وزرا کو شکایت تھی کہ پیمرا صحافیوں کو جیل کیوں نہیں بھیج رہا؟

کائرہ صاحب صرف ایک قدم اٹھالیں۔۔۔جاوید چوہدری

ٹونی روبنز دنیا کے دس بڑے موٹی ویشنل اسپیکرز میں تیسرے نمبر پر آتے ہیں‘ قد چھ فٹ اور سات انچ ہے‘ آواز بھاری ہے‘ زندگی کو ہر زاویئے‘ ہر اینگل سے دیکھ چکے ہیں‘ مہم جو ہیں‘ نارتھ اور

کیا ایران امریکا جنگ ناگزیر ہے۔۔۔وسعت اللہ خان

جانے دیجیے یہ بحث کہ ایران اور عالمی طاقتوں کے درمیان ایرانی جوہری پروگرام کو محدود کرنے کے بارے میں چار برس پہلے امریکا کی طرف سے جس اوباما نے مشترکہ عالمی معاہدے پر دستخط کیے تھے۔اسی امریکا کے ٹرمپ