کالم

چیف جسٹس صاحب سلامت رہیں ۔۔۔ وسعت اللہ خان

چیف جسٹس افتخار چوہدری تو تب قوم کے دل کی دھڑکن بنے تھے جب انھیں پرویز مشرف نے جبراً برطرف کر دیا تھا۔مگر جسٹس ثاقب نثار عزت مآب کی بڑھتی ہوئی عوامی مقبولیت تو خود ان کے جرات مندانہ فیصلوں

ماں اور بچہ ۔۔۔ عبدالقادر حسن

ماں کی نرم و گرم گود بچے کے لیے دنیا بھر کی بہترین راحت ہوتی ہے اور جو سکون اسے ماں کی گود میں ملتا ہے وہ دنیا میں بنائےگئے کسی بھی قسم کے عمدہ بستر پر نہیں مل سکتا

زینب کے بعد۔۔۔جاوید چوہدری

لندن کا علاقہ وائیٹ چیپل 1888ء سے 1891ء کے درمیان پوری دنیا کے لیے خوف کی علامت تھا‘ تاریخ کے ان تین برسوں پر آج تک سیکڑوں ناول اور ڈرامے لکھے گئے اور ہزاروں فلمیں بنیں‘ یہ علاقہ سوا سو

اور کیا چاہیے!۔۔۔امجد اسلام امجد

بل گیٹس اور سٹیو جابز دو ایسے نام ہیں جن کی دولت اور کامیابیوں کی گونج اس کرہ ارض کے ہر آباد علاقے میں سنائی دیتی ہے کہ دونوں نے گزشتہ چار دہائیوں میں دنیا کے چند امیر ترین لوگوں

بھولی بسری آوازیں۔۔۔سعداللہ جان برق

گذشتہ روز دو باتیں ایک ساتھ ہوئیں اور ایک ہی تقریب میں ایک وقت پر ہوئیں، ایک تو یہ ہے کہ ہمیں اچانک یہ پتہ چلا کہ ہمارے صوبے میں ثقافت کا ایک محکمہ بھی ہے اور اس محکمے کے

جمہوریت ،دور تک نہیں۔۔۔نزیر ناجی

آج ایک پریس بریفنگ میں بلاول بھٹو کو اظہار خیال کرتے دیکھا۔ میں یہ سب کچھ ٹی وی پر دیکھ رہا تھا۔ سب سے پہلے یہ نکتہ پیش کروں گا‘ جس کی بلاول نے وضاحت کی۔ کئی ہفتوں اور مہینوں

عدلیہ کے حوالے سے نواز لیگ کی تکلیف- ایاز امیر

وزیراعظم جو اپنے آقا کی آواز ہیں‘ بھی عدلیہ پہ برس پڑے۔ شاید یہی وفاداری کا تقاضا تھا۔ نواز شریف اور مریم بی بی کو سپریم کورٹ سے شدید گلہ ہے اس بنیاد پہ کہ مجھے کیوں نکالا۔ سو وزیراعظم

لاڈلوں کا لاڈلا- سلیم صافی

وہ انتہائی چالاک اور ہوشیار ہیں۔ بڑی ہوشیاری کے ساتھ پوری ٹیم کی جیت کو اپنے نام کردیا۔ پھر بڑی ہوشیاری کے ساتھ ورلڈ کپ کی جیت کو اسپتال بنانے کیلئے اور پھر اسپتال کو بڑی خوبصورتی کے ساتھ سیاست

بھؤ بھؤ سو لفظوں کی کہانی- مبشر علی زیدی

دو کتے گلی میں لیٹے سستا رہے تھے۔ کسی مکان سے ایک لڑکی نکلی۔ کتوں پر نظر پڑتے ہی چلائی۔ ’’امی امی‘‘کہتے ہوئے واپس بھاگ گئی۔ کتے آنکھیں موندے پڑے رہے۔ اس کے بعد ایک بوڑھا گزرا۔ کتوں کو دیکھ

کتب سماوی ،تذکرہ حبیبِ کبریاٗاور المھیمن تحریر؛مراد علی شاہدؔ دوحہ قطر

مسند احمد بن حنبلؑ میں ایک روائت کی گئی ہے کہ ’’اللہ نے حضرت آدمؑ سے لے کر مجھ تک ایک لاکھ جوبیس ہزار پیغمبر بھیجے جن میں سے 315 صاحب کتاب تھے۔‘‘قرآن مجید فرقان حمید جنہیں المھیمن کہہ کے